New Qawwali :
Dear NFAK Lovers if you find any broken link or facing difficulty in downloading please Contact.
Home » , , » Lyrics Hai Kahan Ka Iraada Tumhara Sanam by Nusrat Fateh Ali Khan

Lyrics Hai Kahan Ka Iraada Tumhara Sanam by Nusrat Fateh Ali Khan

The Legend Ustad Nusrat Fateh Ali Khan Qawwal
Hai Kaha Ka Irada Tumhara Sanam [Lyrics]
Posted by Nusrat Collection 
Lyrics Hai Kahan Ka Iraada Tumhara Sanam by Nusrat Fateh Ali Khan
[Video] [MP3] [Lyrics] [Download]
Aaj Ki Baat Phir Nahin Hogi, 
Yeh Mulaqal Phir Nahin Hogi
Aise Baadal To Phir Bhi Aayenge, 
Aisi Barsaat Phir Nahin Hogi

Raat Unko Bhi Hua Yun Mehsoos, 
Jaise Yeh Raat Phir Nahin Hogi
Ik Nazar Mud Ke Dekhne Waale, 
Kya Yeh Khairaat Nahin Hogi

Shab-E-Gham Ki Sahar Nahin Hoti, 
Ho Bhi To Mere Ghar Nahin Hoti
Zindagi Tu Hi Muqtsar Ho Jaa, 
Shab-E-Gham Muqtsar Nahin Hoti

Raazdaaron Se Bachke Chalta Hun, 
Ghamguzsaaron Se Bachke Chalta Hun
Mujhko Dhokha Diya Sahaaron Ne, 
Ab Sahaaron Se Bachke Chalta Hun

Maine Masoom Bahaaron Mein Tumhein Dekha Hai
Maine Purnoor Sitaron Mein Tumhein Dekha Hai
Mere Mehboob teri Pardanasheeni Ki Qasam
Maine Ashqon Ki Qataaron Mein Tumhein Dekha Hai

Hum Buton Se Jo Pyaar Karte Hain, 
Naql-E-Parvardigaar Karte Hain
Itni Qasmein Na Khaao Ghabrakar 
Jaao Hum Aitbaar Karte Hain

Ab Bhi Aa Jaao Kuch Nahin Bigda 
Ab Bhi Hum Itnezaar Karte Hain

Saaz-E-Hasti Baja Raha Hun Main, 
Jashn-E-Masti Mana Raha Hun Main
Kya Ada Hai Nisaar Hone Ki, 
Unse Pehlu Bacha Raha Hun Main

Kitni Pukhta Hai Meri Naadaani, 
Tujhko Tujhse Chhupa Raha Hun Main
Dil Dabota Hun Chashm-E-Saaqi Mein, 
Mai Ko Mai Mein Mila Raha Hun Main

Na Hum Samjhe Na Tum Aaye Kahin Se, 
Paseena Poochiye Apni Jabeen Se

Hai Kahaan Ka Iraada Tumhara Sanam, 
Kiske Dil Ko Adaaon Se Behlaaoge
Sach Batao Ke Is Chandni Raat Mein, 
Kis Se Waada Kiya Hai Kahaan Jaaoge

Dekho Achha Nahin Hai Tumhara Chalan,  
Yeh Jawani Ke Din Aur Yeh Shokhiyaan
Yun Na Aaya Karo Baal Khole Huye, 
Warna Duniya Mein Badnaam Ho Jaaoge

Aaj Jaao Na Bechain Karke Mujhe 
Jaan-E-Jaan Dil Dukhana Buri Baat Hai

Zulf Rukh Se Hata Ke Baat Karo, 
Raat Ko Din Bana Ke Baat Karo
Maikade Ke Charaagh Madhham Hain 
Zara Aankhen Uttha Ke Baat Karo

Phool Kuch Chahiye Huzoor Hamein, 
Tum Zara Muskura Ke Baat Karo
Yeh Bhi Andaaz-E-Guftagu Hai Koi, 
Jab Karo Dil Dukha Ke Baat Karo )

Hum Tadapte Rahenge Yahaan Raat Bhar, 
Tum To Aaram Ki Neend So Jaaoge

Paas Aao To Tumko Lagayein Gale, 
Muskurate Ho Kyun Duur Se Dekh Kar
Yunhi Guzre Agar Yeh Jawani Ke Din, 
Hum Bhi Pachhtayenge Tum Bhi Pachhtaoge

Bewafa Bemurawwat Hai Unki Nazar, 
Yeh Badal Jaayenge Zindagi Loot Kar
Husn Walon Se Dil Ko Lagaaya Agar, 
Aye ‘Fanaa’ Dekho Bemaut Mar Jaaoge
آج کی بات بھر نہیں ہوگی
یہ ملاقات پھر نہیں ہو گی
ایسے بادل تو پھر بھی آئینگے
ایسی برسات پھر نہیں ہو گی

رات اُن کو بھی ہوا یہ محسوس
کہ یہ رات پھر نہیں ہوگی
اک نظر مڑ کے دیکھنے والے
کیا یہ خیرات پھر نہیں ہو گی

شب غم کی سحر نہیں ہوتی
ہو بھی تو میرے گھر نہیں ہوتی
زندگی تو ہی مختصر ہو جا
شب غم تو مختصر نہیں ہوتی

رازاداروں سے بچ کے چلتا ہوں
غمگساروں سے بچ کے چلتا ہوں
مجھ کو دھوکہ دیا سہاروں نے
اب سہاروں سے بچ کے چلتا ہوں

میں نے معصوم بہاروں میں تمہیں دیکھاہے
میں نے پرنورستاروں میں تمھیں دیکھاہے
میرے محبوب تیری پردہ نشینی کی قسم
میں نے اشکوں کی قطاروں میں تمہیں دیکھاہے

ہم بتوں سے جو پیار کرتے ہیں
نقل پروردگار کرتے ہیں
اتنی قسمیں نہ کھائو گھبرا کر
جائو ہم اعتبار کرتے ہیں

اب بھی آجائو کچھ نہیں بگڑا
اب بھی ہم انتظار کرتے ہیں

سازِ حستی بجا رہا ہوں میں
جشنِ مستی منا رہا ہوں میں
کیا ادا ہے نثار ہونے کی
اُن سے پہلو بچا رہا ہوں میں

کتنی پختہ ہے میری نادانی
تجھکو تجھی سے چھپا رہاہوں میں
دل ڈبوتا ہوں چشمِ ساقی میں
مے کو مے میں ملا رہاہوں میں

نہ ہم سمجھے نہ تم آئے کہیں سے
پسینہ پونچھئیے اپنی جبیں سے

ہے کہاں کا ارادہ تمھارا صنم
کس کے دل کو ادائوں سے بہلائوں گے
سچ بتائو کے اس چاندنی رات میں
کس سے وعدہ کیا ہے کہاں جائوں گے

دیکھو اچھا نہی ہے تمھارا چلن
یہ جوانی کے دن اور یہ شوخیاں
یوں نہ آیا کرو بال کھولے ہوے
ورنہ دنیا میں بدنام ہو جائوں گے

آج جائو نہ بے چین کر کے مجھے
جانِ جاں دل دکھانا بری بات ہے

زلف رخ سے ہٹا کے بات کرو
رات کو دن بنا کے بات کرو
میکدے کے چراغ مدہم ہے
ذرا آنکھیں اُٹھا کے بات کرو

پھول کچھ چاہیئے حضور ہمیں
تم ذرا مسکرا کے بات کرو
یہ بھی اندازِ گفتگو ہے کوئی
جب کرو دل دُکھا کے بات کرو

ہم تڑپتے رہینگے یہاں رات بھر
تم تو آرام کی نیند سو جائو گے

پاس آئو تو تم کو لگائے گلے 
مسکراتے ہو کیوں دور سے دیکھ کر
یونہی گزرے اگر یہ جوانی کے دن
ہم بھی پچھتائینگے تم بھی پچھتائو گے

بے وفا بے مروت ہے ان کی نظر
یہ بادل جائینگے زندگی لُوٹ کر
حسن والوں سے دل کو لگایا اگر
اے "فنا" دیکھو بے موت مر جائو گے
Embed Code [Copy and Paste Code Where You Want]
Video
<script type="text/javascript"><!--
google_ad_client = "ca-pub-7105599396460731";
/* Nusrat Banner */
google_ad_slot = "1942697416";
google_ad_width = 468;
google_ad_height = 60;
//-->
</script>
<script src="//pagead2.googlesyndication.com/pagead/show_ads.js" type="text/javascript">
</script>
Tags:
Lyrics Hai Kahan Ka Iraada Tumhara Sanam by Nusrat Fateh Ali Khan
Muhammad Ahsan
5 of 5
The Legend Ustad Nusrat Fateh Ali Khan Qawwal Hai Kaha Ka Irada Tumhara Sanam [ Lyrics ] Posted by Nusrat Collection  ...
Share this Post :

0 comments:

Speak up your mind

Tell us what you're thinking... !

Search Your Video

Recent Post

Follow by Email

Google+ Followers

Recent Visitors

Nusrat Collection popular Posts

 
http://www.healpakistan.com/
Support : Creating Website | Johny Template | Mas Template
Proudly powered by Blogger
Copyright © 2011. Nusrat Collection - All Rights Reserved
Template Design by Creating Website Published by Mas Template